Select your Top Menu from wp menus

پاکپتن کی لیڈی کانسٹیبل کی رقص کرنے کی ویڈیو سامنے آگئی، برطرف کر دیا گیا

14

اسلام آباد(نیو زڈیسک) پاکپتن کی لیڈی کانسٹیبل کی یونیفارم پہن کر رقص کرنے کی ویڈیو سامنے آئی جو دیکھتے ہی دیکھتے وائرل ہو گئی لیکن کیا معلوم تھا کہ یونیفارم پہن کر رقص کرنا لیڈی کانسٹیبل کو مہنگا پڑ جائے گا۔ لیڈی کانسٹیبل کی یونیفارم میں رقص کرنے کی ویڈیو وائرل ہونے پر اسے نوکری سے برطرف کردیا گیا ۔ لیڈی کانسٹیبل ثناء تنویر کی ویڈیو نومبر 2018ء میں وائرل ہوئی جب وہ دربار بابا فرید کی سیکیورٹی وہ مامور تھی ۔دوران ڈیوٹی خاتون کانسٹیبل ثناء تنویر نے یونیفارم میں رقص کیا، جبکہ اس کی ساتھی کانسٹیبل امبرین ویڈیو بناتی رہی۔ رقص کی ویڈیوسوشل میڈیاپروائرل ہوتے ہی اعلیٰ افسران نے واقعہ کا نوٹس لیا اور معطل کردیا۔ اس واقعہ کی چار ماہ انکوائری چلی جس کے بعد ڈی پی او نے دونوں لیڈی کانسٹیبلز کو برطرف کردیا ۔ڈی پی اوماریہ محمود کا کہنا ہے کہ محکمانہ ڈسپلن کی خلاف ورزی کسی صورت برداشت نہیں کی جائے گی ۔خیال رہے کہ آج کل کے دور میں نوجوان نسل جدید موبائل فونز کو پسند کرتی ہے اور پھر اپنا دل بہلانے کے لیے کئی ایپلی کیشنز بھی موبائل فونز میں انسٹال کرتی ہے جبکہ سوشل میڈیا کا استعمال بھی عام ہے یہی وجہ ہے کہ کوئی بھی ویڈیو، تصویر یا خبر چند ہی منٹوں میں جنگل کی آگ کی طرح پھیل جاتی ہے۔ حال ہی میں کئی پولیس اہلکاروں نے یونیفارم پہن کر دوران ڈیوٹی ٹک ٹاک پر ویڈیوز بنائیں جن کے وائرل ہونے کے بعد یا تو انہیں معطل کر دیا گیا یا پھر ان کے خلاف کارروائی کا آغاز کر دیا گیا۔اس سے قبل کراچی پولیس کے اہلکاروں کی بھی ٹک ٹاک ویڈیو سامنے آئی تھی جس میں نہ صرف انہیں یونیفارم میں دیکھا گیا تھا بلکہ انہوں نے اس ویڈیو میں پولیس کی سرکاری گاڑی کا بھی استعمال کیا تھا جس پر سندھ پولیس کو تنقید کا سامنا کرنا پڑا۔ جبکہ پنجاب پولیس کے اہلکاروں کی بھی ٹک ٹاک ویڈیوز کسی سے چھُپی ہوئی نہیں ہیں۔ جبکہ پنجاب پولیس میں اصلاحات اور ان کے نتائج سے متعلق حکومتی دعووں کے برعکس گذشتہ پانچ برسوں میں تقریباً تین لاکھ پولیس افسران و اہلکار مختلف نوعیت کے جرائم میں ملوث پائے گئے ہیں۔

About The Author

Related posts